Home  
    Mayor  
    Deputy Mayor  
    Metropolitan Commissioner  
    Departments  
    KMC Directory  
    Photo Gallery  
    Video Gallery  
       
 
 
       
    Tender Information  
    KMC Function  
    Tenders  
    Grand Auctions  
    Section 144 CR.P.C  
    Notifications  
    KMC Resolution  
       
 
 
       
    Public Notice  
    Information  
    National Holidays  
    Prayer Timings  
    Archive  
       


 
 
 
 
     
  سپریم کورٹ کی ہدایت پر ایمپریس مارکیٹ سمیت صدر کو تجاوزات سے پاک ماڈل علاقہ بنانے کے لئے ہفتے کو کمشنر آفس میں منعقدہ اعلی سطحی اجلاس میں فیصلہ کیا گیا -  
     
  03-Nov-2018  
     
   
     
  سپریم کورٹ کی ہدایت پر ایمپریس مارکیٹ سمیت صدر کو تجاوزات سے پاک ماڈل علاقہ بنانے کے لئے ہفتے کو کمشنر آفس میں منعقدہ اعلی سطحی اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ علاقے سے تجاوزات کے خاتمے اور اس کے بعد مانیٹرنگ کے لئے متعلقہ اداروں کے افسران پر مشتمل ٹاسک فورس قائم کرکے بھر پور آپریشن شروع کیا جائے، جس کا نوٹیفکیشن آئندہ دو روز کے اندر اندر جاری کیا جائیگا، تین ہفتوں کے اندر اندر ہر صورت میں صدر اور ایمپریس مارکیٹ سے تمام تجاوزات کا خاتمہ کیا جائے گا، ایمپریس مارکیٹ کے اندر اور اطراف میں غیر قانونی دکانوں، پختہ تعمیرات اور پتھارے ہٹانے کی کارروائی اور اس سے قبل علاقہ پولیس کی نشان دہی پر قبضہ مافیا کے سرغنہ کے خلاف آپریشن اور ان کو گرفتار کیا جائیگا۔ نوید کلینک تا لکی اسٹار صدر کے تینوں تھانوں کی حدود میں فٹ پاتھوں کو مکمل خالی کرایاجائے گا سرکاری امور میں مداخلت یا رکاوٹ کرنے والے مافیا کے کارندوں کو گرفتار اور سزائیں دی جائیں، صدر کی سڑکوںپر پارکنگ پر مکمل پابندی اور پارکنگ پلازہ کو بحال کیا جائے گا، فٹ پاتھوں کو خالی کرانے کے بعد فوری طور پر مرمت اورتعمیر نو کا کام شروع کیا جائے گاکراچی کنٹونمنٹ کے علاقے میں خالی پلاٹوں میں پتھارے کھڑے کرنے اور پتھاروں کو بجلی کی فراہمی پرمکمل پابندی لگائی گئی ہے، اجلاس کی صدارت میئر کراچی وسیم اختر اور کمشنر کراچی افتخار علی شلوانی نے کی جبکہ ڈپٹی کمشنر سائوتھ ، ویسٹ، ڈسٹرکٹ پولیس ویسٹ سائوتھ، ٹریفک پولیس، پاکستان رینجرز، بلدیہ عظمیٰ کراچی، ادارہ ترقیات، کراچی اینٹی انکروچمنٹ پولیس، لوکل گورنمنٹ بورڈ، ڈی ایم سیز سائوتھ ویسٹ اور دیگر اداروں کے سینئر افسران نے شرکت کی، اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے میئر کراچی وسیم اختر نے کہا کہ صدر میں تجاوزات کراچی کابہت بڑا مسئلہ ہے، ان میں بعض ایسے افراد بھی ہیں جنہوں نے عدالتوں سے حکم امنتاہی حاصل کیا ہوا ہے سپریم کورٹ آف پاکستان کے فیصلے اور ہدایت سے بہت بڑا مسئلہ حل ہوگیا اور اب کراچی کے تمام اسٹیک ہولڈر اداروں کو مل کر اس علاقے کو ماڈل اور خوبصورت بنانے کا ایک بہترین موقع میسر آیا ہے، اس علاقے کو تجاوزات سے پاک کرنے اور خوبصورت بنانے میں کوئی رکاوٹ نہیں، سپریم کورٹ کے احکامات پر لازماً عملدرآمد ہوگا جس کے لئے چند روز میں آپریشن شروع کردیا جائے گا، انہوں نے کہا کہ ایمپریس مارکیٹ کے اندر اور باہر تجاوزات قائم ہیں جس سے شہریوں کو پریشانی کے ساتھ ساتھ تاریخی عمارت کی خوبصورتی اور اصل حالت بھی مثاثر ہوگئی ہے، فٹ پاتھ پر مکمل قبضہ ہے، بلدیہ عظمیٰ کراچی نے شہر بھر میں تجاوزات کے خلاف آپریشن شروع کیا ہوا ہے تاہم صدر کے علاقے سے تجاوزات کو صاف کرنا بڑا کام ہوگا، انہوں نے کہا کہ کسی بھی معاشرے میں فٹ پاتھوں اور پارکوں میں تجارتی سرگرمیوں کی اجازت نہیں ہوگی، ماضی میں جو کوتاہیاں یا غلطیاں ہوئیںان کے ازالے کا وقت ہے اور اس میں کوئی غفلت نہیں ہونا چاہئے، انہوں نے کہا کہ قابضین کو پمفلیٹ اور بینرز کے ذریعے مطلع کردیا گیا ہے کہ اب رضا کارانہ طور پر فٹ پاتھوں کو خالی کردیں بصورت دیگر ان کے خلاف سخت کارروائی کا وقت آگیا ہے ہم نے ہر حالت میں تین ہفتوں کے دوران صدر کو تجاوزات سے مکمل پاک کرنا ہے، کمشنر کراچی افتخار علی شلوانی نے کہا کہ ملک کی سب سے بڑی عدالت کا حکم ہے اس میں تمام اداروں کو ایک ٹیم ورک کے تحت کام کرکے صدر کو صاف کرنا چاہئے، اس کام میں اب کوئی رکاوٹ باقی نہیں رہی، انہوں نے کہا کہ اس بات کو یقینی بنانے کے لئے کہ تجاوزات کو ہٹانے کے بعد دوبارہ نہ قائم ہوں ٹاسک فورس قائم کی جائے جو 24 گھنٹے علاقے میں گشت کرے گی، ہفتہ اور اتوار صدر میں ٹرانسپورٹ کا داخلہ بند اور پیدل چلنے والوں کو سہولتیں مہیا کی جائیں گی ایسے افراد کو رجسٹرڈ کیا جائے جو ہینڈی کرافٹ، بک شاپس یا کافی ہائوس کا کام کریں، یہ افراد ہفتہ اور اتوار اس علاقے میں سڑک پر اسٹال لگا سکیں گے، انہوں نے کہا کہ فٹ پاتھوں کو خالی کرانے کے فوری بعد ان کی مرمت کے کام کا آغاز کردیا جائے، انہوں نے کہا کہ میئر کراچی اور کمشنر آفس آپریشن کے لئے مرکزی ادارے کاکام کریں گے تاکہ تمام اداروں کے ساتھ رابطے میں رہیں اور مشترکہ طور پر مہم کاآغاز کیا جائے، میٹروپولیٹن کمشنر ڈاکٹر سید سیف الرحمن نے اجلاس میں رپورٹ پیش کرتے ہوئے کہا کہ بلدیہ عظمیٰ کراچی نے انسداد تجاوزات کے لئے تمام تیاریاں مکمل کرلی ہیں جس کا آغاز آئندہ 2 روز میں ہوگا آج کا اجلاس تمام اسٹیک ہولڈراداروں کے ساتھ باہمی رابطہ قائم کرنے کے لئے ہے، انہوں نے کہا کہ صدر کے تینوں تھانوں کے حدود میں آپریشن کیا جائے گا، اس سلسلے میں پہلا مرحلہ مکمل کرلیا گیا ہے فٹ پاتھیں 90 فیصد سے زیادہ قبضہ ہے جبکہ ایمپریس مارکیٹ کے اندر اور اطراف میں قابضین نے قبضہ کیا ہوا ہے انہو ںنے کہا کہ فیصلہ کیا گیا ہے، کوئی اگر کے ایم سی کو کرایہ بھی ادا کررہا ہو اور قابضین کے زمرے میں آتا ہے اور اس کو بھی ہٹایا جائے گا اس موقع پر ڈسٹرکٹ پولیس کے افسران نے نشاندہی کی کہ صدر میں منتظم مافیا کام کررہا ہے مافیا کے ایک ایک کارندے کے 100 سے زیادہ پتھارے ہیں جنہوں نے سینکڑوں افراد ملازمت میں رکھے ہوئے ہیں مافیا جو اس سارے نظام کو آپریٹ کررہا ہے تجاوزات ہٹانے میں سب سے بڑی رکاوٹ پیدا کررہے ہیں، ان کا صفایا ہوئے بغیر تجاوزات کے خاتمہ میں کامیابی ممکن نہیں، اس موقع پر ڈسٹرکٹ ایڈمنسٹریشن، ڈسٹرکٹ پولیس، ٹریفک پولیس اور دیگر اداروں کے افسران نے بھی خیالات کا اظہار کیا، تجویز کو حتمی شکل دینے اور آپریشن شروع کرنے کی حتمی تاریخ طے کرنے کے لئے اتوار کو ڈپٹی کمشنر سائوتھ کے آفس میں دوبارہ اجلاس ہوگا جس میں آپریشن کی تاریخ کا تعین کیا جائے گا، اس سے پہلے تشہیری مہم کے ذریعے صدر اور قابضین اور قبضہ مافیا کے سرغنہ کو متنبہ کیا جارہا ہے کہ وہ سڑکوں اور فٹ پاتھوں پر سے از خود قبضہ ختم کردیں۔  
     
     
   
     
     

 

 

 

 

 
 
     
 

Copyright © 2011-2012 Karachi Metropolitan Corporation. All rights reserved.
The KMC will not be responsible for the content of external internet sites. / Login  / Webmail  / Webmail 2  / 1339 Executive Dashboard