Home  
    Mayor  
    Deputy Mayor  
    Metropolitan Commissioner  
    Departments  
    KMC Directory  
    Photo Gallery  
    Video Gallery  
       
 
 
       
    Tender Information  
    KMC Function  
    Tenders  
    Grand Auctions  
    Section 144 CR.P.C  
    Notifications  
    KMC Resolution  
       
 
 
       
    Public Notice  
    Information  
    National Holidays  
    Prayer Timings  
    Archive  
       


 
 
 
 
     
  میئر کراچی نے کہا کہ عزت مآب سپریم کورٹ کے چیف جسٹس اور دیگر معزز جج صاحبان کا پاکستان کے شہریوں کے بنیادی اور آئینی حقوق محفوظ بنانے کے لئے غیر معمولی او ر بے مثال اقدامات کرنا قابل تحسین ہے  
     
  27-Jan-2018  
     
   
     
  میئر کراچی وسیم اختر آج سپریم کورٹ آف پاکستان میں پیش ہوئے اور سپریم کورٹ کے حکم نامہ مورخہ 14جنوری 2018 کے تحت کراچی میں فراہمی آب اور صفائی ستھرائی کی صورتحال میں بہتری لانے کیلئے تشکیل دیئے گئے کمیشن میں بطور میئر بلدیہ عظمیٰ کراچی نمائندگی کی اجازت دینے کی درخواست کرتے ہوئے تجاویز پیش کیں کہ کراچی کو اس کے معاملات اور محصولاتی اختیار پر وسیع تر کنٹرو ل اور اس کے شہریوں کے وسیع تر مفاد میں فیصلے کرنے کی آزادی دینی ہوگی بصورت دیگر یہ شہر مزید بدتر صورتحال سے دوچار ہو سکتا ہے۔۔ میئر کراچی نے کہا کہ عزت مآب سپریم کورٹ کے چیف جسٹس اور دیگر معزز جج صاحبان کا پاکستان کے شہریوں کے بنیادی اور آئینی حقوق محفوظ بنانے کے لئے غیر معمولی او ر بے مثال اقدامات کرنا قابل تحسین ہے جس کے لئے مجھے بحیثیت میئر کراچی شہر میں صاف پینے کے پانی کی فراہمی، صنعتی اور گھریلو فضلے کی سمندر میںنکاسی اور ادارہ فراہمی ونکاسی آب کراچی سے متعلق دیگر معاملات میں معزز عدالت کی مدد کے لئے بلایا گیاتھا اور میں اس سلسلے میں تمام تر سیاسی و دیگر وابستگیوںسے بالاتر ہو کر خالصتاً کراچی کے عام آدمی کے مفاد کی خاطر ہر طرح کے تعادن کے لئے تیار ہوں۔ انہوں نے کہاکہ سپریم کورٹ کا کراچی میں فراہمی آب ، صفائی ستھرائی اور دیگر شہری معاملات کو دیکھنا ظاہر کرتا ہے کہ موجودہ آئینی اور انتظامی ماڈل ناکام ہوچکا ہے، انہو ںنے کہاکہ کراچی کے مسائل کی وجہ ان لوگوں کی حکمرانی ہے جنہیں یہاں کے لوگوں نے منتخب نہیں کیا اور نہ ہی وہ ان پر اعتماد کرتے ہیں ، شہر میں سڑکوں کی قابل رحم حالت، ناقص صفائی ستھرائی کا نظام اورجگہ جگہ گندے پانی کو جوہڑ اور ترقیاتی سرگرمیوں کا فقدان اس حقیقت کا مظہر ہے کہ کراچی کو یا تو نظرانداز کیا جارہا ہے یا پھر سزا دی جارہی ہے ، انہوں نے کہاکہ صوبائی حکومت نے سندھ لوکل گورنمٹ ایکٹ 2013کے تحت اورآئین کے آرٹیکل140اے کے مطابق انتظامی و مالیاتی اختیارات کی نچلی سطح پر منتقلی سے انحراف کیا اور اس کے بجائے مقامی حکومتوں کو اپنا تابع بنادیا۔ صوبائی حکومت نے اس ایکٹ کو اپنے اختیارات میں توسیع کے لئے استعمال کیا اور فراہمی ونکاسی آب، ماسٹر پلان، سالڈ ویسٹ مینجمنٹ، اربن لینڈ مینجمنٹ ، ٹرانسپورٹ اور ماس ٹرانزٹ اتھارٹی ، ٹریفک مینجمنٹ وغیرہ سمیت تمام محکمے خود سنبھال لئے یہاں تک کہ انفراسٹرکچر ڈیولپمنٹ پروجیکٹ جیسے سڑکوں ، پلوں، انڈرپاس، نالوں کیے تعمیر کا کابھی بلدیاتی اداروں سے لے کر صوبائی لوکل گورنمنٹ ڈپارٹمنٹ کے حوالے کردیا گیا، وزیر اعلیٰ سندھ خودسندھ سولڈ ویسٹ مینجمنٹ بورڈ کے چیئرمین ہیں اور شہر میں ابلتے ہوئے گٹر اور کچرے کے ڈھیر یہ بتا سکتے ہیں کہ ان کی پالیسی کس حد تک کامیاب ہے ۔ میئر کراچی نے کہاکہ دنیا بھر میں مقامی حکومت کے اداروں کو خاص اہمیت اور اختیارات حاصل ہیں مگر یہاں صورتحال اس کے برعکس ہے اور حالات اس حد تک خراب ہوچکے ہیں کہ اگر حکمرانی کا یہی طریقہ برقرار رہا تو کراچی مستقبل قریب میں کچی آبادی کا منظر پیش کرسکتا ہے۔ انہوں نے کہاکہ کراچی جیسے بڑے شہرکو شہری مسائل کے حل کے لئے بڑے پیمانے پر فنڈز کی ضرورت ہے مگر صوبائی حکومت نے مقامی حکومت کے ہاتھ باندھ کرانہیں شدید بحران سے دوچار کردیا ہے ، میئر کراچی وسیم اختر نے کہاکہ سندھ میں صوبائی حکومت کی طرف سے بلدیاتی امور ہتھیا لینا غیرقانونی اور آئین پاکستان کے آرٹیکل 140 اے کی سنگین خلاف ورزی ہے ، انہو ںنے کہاکہ موجودہ حالات میں کراچی میں درپیش مسائل سے نمٹنے کے لئے واحد راستہ انتظامی ڈھانچے میں جامع اصلاحات ہیں جس کے لئے کراچی کو ایک ایسی خودمختار میٹروپولیٹن سٹی کا درجہ درکار ہوگا جسے مناسب مالیاتی وسائل اور ان کے نظم ونسق پر کنٹرول حاصل ہو ، میئر کراچی وسیم اختر نے کراچی میں فراہمی ونکاسی آب کے حوالے سے تفصیلات اور موجودہ صورتحال کا تفصیلی جائزہ پیش کرتے ہوئے معزز عدالت عالیہ سے درخواست کی کہ کراچی کے شہریوں کی مشکلات کے پیش نظر سپریم کورٹ آف پاکستان کے حکم نامہ نمبر H.R.C. No. 6844 of 2006، مورخہ 10 اکتوبر2007 پر عملدرآمد یقینی بنایا جائے ۔  
     
     
   
     
     

 

 

 

 

 
 
     
 

Copyright © 2011-2012 Karachi Metropolitan Corporation. All rights reserved.
The KMC will not be responsible for the content of external internet sites. / Login  / Webmail  / Webmail 2  / 1339 Executive Dashboard