Home  
    Mayor  
    Deputy Mayor  
    Metropolitan Commissioner  
    Departments  
    KMC Directory  
    Photo Gallery  
    Video Gallery  
       
 
 
       
    Tender Information  
    KMC Function  
    Tenders  
    Grand Auctions  
    Section 144 CR.P.C  
    Notifications  
    KMC Resolution  
       
 
 
       
    Public Notice  
    Information  
    National Holidays  
    Prayer Timings  
    Archive  
       


 
 
 
 
     
  میئر کراچی وسیم اختر نے کہا ہے کہ جانوروں کے غیرقانونی ذبیحے کو روکنے کے لئے اینیمل سلاٹرنگ کنٹرول ایکٹ کے تحت میونسپل مجسٹریسی نظام کو موثر بنایا جائے-  
     
  07-Nov-2017  
     
   
     
  میئر کراچی وسیم اختر نے کہا ہے کہ جانوروں کے غیرقانونی ذبیحے کو روکنے کے لئے اینیمل سلاٹرنگ کنٹرول ایکٹ کے تحت میونسپل مجسٹریسی نظام کو موثر بنایا جائے اور کے ایم سی کے زیر انتظام مذبحہ خانوں اور 26 گوشت مارکیٹوں میں موجود دکانوں کو دیگر چیزوں کے بجائے صرف گوشت کی فراہمی کے لئے مخصوص کرنے کے ساتھ ساتھ شہریوں کو حفظان صحت کے اصولوں کے مطابق گوشت کی فراہمی یقینی بنائی جائے،شہرکی ضروریات کو پورا کرنے کے لئے ناردرن بائی پاس کے قریب اورنگی میں نیامذبحہ خانہ تعمیر کیا جائے گا جہاں یومیہ تین ہزار جانوروں کے ذبیحے کی گنجائش ہوگی، ان خیالات کا اظہار انہوں نے منگل کے روز اپنے دفتر میں محکمہ ویٹرنری سروسز کے متعلق اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا، اس موقع پر سٹی کونسل میں پارلیمانی لیڈر اسلم شاہ آفریدی، چیئرمین اراضیات کمیٹی ارشد حسن، چیئرمین ویٹرنری کمیٹی سید مزمل شاہ میونسپل کمشنر ڈاکٹر اصغر عباس، ڈائریکٹر ویٹرنری سروسز محمد فاروق سمیت دیگر متعلقہ افسران بھی موجود تھے، میئر کراچی نے کہا کہ مذبحہ خانوں سے گوشت کی ترسیل کے لئے عنقریب میٹ وین اور کنٹینرزکا نظام متعارف کرایا جائے گا جس کے لئے ضروری اقدامات مکمل کرلئے جائیں، انہوں نے ہدایت کی کہ جانوروں کے باڑوں کی رجسٹریشن اور ویٹرنری سروسز کا دائرہ وسیع کرنے کے لئے منصوبہ بندی کی جا رہی ہے جبکہ جانوروں کی خرید و فروخت اور بیماریوں سے تحفظ کے لئے متعلقہ ذیلی قواعد پر عملدرآمد یقینی بنایا جائے گا، میئر کراچی نے کہا کہ ریونیو میں اضافے کے لئے گوشت اور پولٹری کی دکانوں سے لائسنس فیس کی وصولی بروقت ہونی چاہئے، واجبات کی وصولی کے لئے دکانداروں کو فوری نوٹس جاری کئے جائیں اور ریکوری پر مامور عملے کو فعال کیا جائے، انہوں نے کہا کہ برآمدات کے لئے بنائے گئے مذبحہ خانوں سے مقامی مارکیٹوں میں گوشت کی سپلائی کنٹرول کرنے کے لئے اقدامات اور متعلقہ ذیلی قواعد کی رو سے شہر بھر میں گوشت کی دکانوں کے لئے معیارات کا تعین کیا جائے،انہوں نے لانڈھی ،آنسو گوٹھ ملیر، مواچھ گوٹھ بلدیہ کی مویشی منڈی میں ضلعی بلدیات کی مداخلت سے سالانہ دو کروڑ روپے نقصان کا سخت نوٹس لیتے ہوئے محکمہ قانون کو ہدایت کی کہ اس معاملے میں قواعد و ضوابط پر عملدرآمد کے لئے کارروئی کی جائے تاکہ ریونیو کی مد میں ہونے والے اس نقصان سے کے ایم سی کو بچایا جاسکے اجلاس میں دی گئی بریفنگ کے دوران میئر کراچی کو بتایا گیا کہ کراچی میں ملک کے مختلف حصوں سے مویشی، گوشت اور دودھ کی فراہمی کے لئے لائے جاتے ہیں،لانڈھی کیٹل کالونی کے مذبحہ خانے کو ازسرنو بحال اور نارتھ کراچی کے مذبحہ خانے کو اپ گریڈ کیا جارہا ہے جبکہ کیٹل کالونی کورنگی کے مذبحہ خانے میں انفراسٹرکچر ڈویلپمنٹ کا کام جاری ہے، لانڈھی مذبحہ خانے میں فی ہفتہ 4500 بڑے اور6500 چھوٹے جانور ذبحہ کئے جاتے ہیں جبکہ نارتھ کراچی مذبحہ خانے میں فی ہفتہ 1400 بڑے جانور ذبحہ ہوتے ہیں ، لانڈھی کیٹل کالونی میں تقریباً 2 ہزار باڑے قائم ہیں جہاں دودھ دینے والے 5 لاکھ جانوروں کی گنجائش ہے جبکہ کیٹل کالونی کورنگی میں 662 باڑوں میں ایک لاکھ 20 ہزار دودھ دینے والے جانور موجود ہیں، اس کے علاوہ نجی شعبے میں 4 کیٹل کالونیاںقائم ہیں جہاں دودھ کی سپلائی کے لئے تقریباً3 لاکھ جانور موجود ہیں۔  
     
     
 
News Photo Gallery
 
 
 
 
 
 
 
 
 

 
     
     

 

 

 

 

 
 
     
 

Copyright © 2011-2012 Karachi Metropolitan Corporation. All rights reserved.
The KMC will not be responsible for the content of external internet sites. / Login  / Webmail  / Webmail 2  / 1339 Executive Dashboard