Home  
    Mayor  
    Deputy Mayor  
    Metropolitan Commissioner  
    Departments  
    KMC Directory  
    Photo Gallery  
    Video Gallery  
       
 
 
       
    Tender Information  
    KMC Function  
    Tenders  
    Grand Auctions  
    Section 144 CR.P.C  
    Notifications  
    KMC Resolution  
       
 
 
       
    Public Notice  
    Information  
    National Holidays  
    Prayer Timings  
    Archive  
       


 
 
 
 
     
  میئر کراچی وسیم اختر نے کہا ہے کہ حکومت سندھ نے میگا پروجیکٹ کے نام پر کراچی کے شہریوں کے آکٹرائے ضلع ٹیکس کے 8 ارب روپے ضائع کئے۔  
     
  01-May-2019  
     
   
     
  میئر کراچی وسیم اختر نے کہا ہے کہ حکومت سندھ نے میگا پروجیکٹ کے نام پر کراچی کے شہریوں کے آکٹرائے ضلع ٹیکس کے 8 ارب روپے ضائع کئے۔یہ رقم کے ایم سی کی تھی جس کو روک کر کمیشن لینے کی غرض سے من پسند ٹھیکیداروں کو نوازا گیا اور انتہائی غیر معیاری اور بغیر کسی منصوبہ بندی کے منصوبے بنائے گئے جو شہر کی فوری ضرورت نہیں تھی،ان خیالات کا اظہار انہوں نے منگل کی شام کورنگی اللہ والا ٹاون میں برساتی نا لے اور دیگر منصوبوں کے افتتاح کے موقع پر میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہا کہ حکومت 8 ارب کی رقم سے عوامی ٹرانسپورٹ چلاتی، سیوریج اور پانی کے منصوبے مکمل کرتی یا کچرے کے ڈھیروں کو اٹھا لیتی تو شہریوں کو کچھ سہولت ہوتی مگر چونکہ نیت کام کرنے کی نہیں بلکہ کوئی اور مقصد تھا اس لئے ایسے کاموں پر وسائل خرچ کر کے حکومت نے کراچی کے شہریوں کے پیسے کا ستیا ناس کیا جس کو عوام کبھی معاف نہیں کر سکتے۔ مئیر کراچی نے کہا کہ یہ رقم کے ایم سی اکٹرائے کی تھی جس کو حکومت سندھ نے ضائع کر دیا اگر کے ایم سی کو دی جاتی تو شہریوں کی ضروریات کے مطابق منصوبہ بندی سے کام کئے جاتے جس سے شہریوں کو فوری سہولت حاصل ہوتی ۔ پیپلز پارٹی کے منصوبے انتہائی غیر معیاری ہیں اور کمیشن لے کر ٹھیکے دیے گئے تو منصوبہ کیسے معیاری ہو سکتا ہے۔انہوں نے کہا کہ اب کے ایم سی کے اسپتال مانگ رہے ہیں مگر ہم شہر کے اسپتال ان لوگوں کے حوالے نہیں کر سکتے۔ایک سوال کے جواب میں مئیر کراچی نے کہا کہ کہ پیپلزپارٹی کی روایت رہی ہے کہ وہ ہم پر الزامات لگوانے کے لئے شریف لوگوں اور مہاجر رہنماوں کو آگے لاتے ہیں ان کے پاس مرتضی وہاب ہی ایک تعلیم یافتہ خاندانی آدمی ہے اس کو خراب کر رہے ہیں میں مرتضی وہاب کو مشورہ دوں گا کہ ان کرپٹ لوگوں سے دور ہو جائیں یہ آپ کو خراب کر دیں گے۔ مئیر کراچی وسیم اختر نے کہا کہ حکومت سندھ نے یونیورسٹی روڈ پر 2 ارب خرچ کر دئے اس کا جو حال ہے وہ آپ کے سامنے ہے میں نے پہلے ہی کہا تھا کہ اس کو صحیح طریقہ سے بناو مگر انہوں نے نہیں سنی اور کراچی کے عوام کے دو ارب کو بھی ضائع کر دیا۔انہوں نے کہا ہے کہ اللہ والا ٹاون میں کچرے کے ڈھیروں اور بدبو سے اس علاقے سے گزرنا مشکل ہو گیا ہے۔کے ایم سی نے اس علاقے سے تجاوزات کو ختم کیا ہے اور اب یہاں سڑکوں کی تعمیر کی منصوبہ بندی کی جا رہی ہے وسائل اور اختیارات نہ ہونے کے باوجود کے ایم سی شہریوں کو سہولیات کی فراہمی کے لئے کوشاں ہے۔علاقے میں پرائیویٹ سیکٹر جمعیت سوداگراں کے اشتراک سے 3 کروڑ روپے کی لاگت سے برساتی نالوں کو تعمیر کیا گیا۔اس موقع پر سلیم فاروقی، سعید احمد پریس والا اور شمیم فرپو اور علاقہ ایم پی اے غلام جیلانی بھی موجود تھے۔  
     
     
   
     
     

 

 

 

 

 
 
     
 

Copyright © 2011-2012 Karachi Metropolitan Corporation. All rights reserved.
The KMC will not be responsible for the content of external internet sites. / Login  / Webmail  / Webmail 2  / 1339 Executive Dashboard